If you're a member of Pakistan.web.pk then you may login using your Pakistan Web Name and Password.

If you see "Incorrect Password" error then you need to reset your password, Click Here to Reset. Or just Submit this Form so we'll fix it for you.

Farz Karo Hum Tare Hote

Discussion in 'Urdu Poetry Choice' started by anam eee, Nov 12, 2017.

  1. anam eee

    anam eee New Reader Staff Member

    فرض کرو ہم تارے ہوتے
    ایک دوجے کو دور دور سے دیکھ کر جلتے بجھتے
    اور پھر ایک دن
    شاخ فلک سے گرتے اور تاریک خلاوؤں میں کھو جاتے!
    دریا کے دو دھارے ہوتے،
    اپنی اپنی موج میں بہتے
    اور سمندر تک اس اندھی، وحشی اور منہ زور مسافت
    کے جادو میں تنہا رہتے
    فرض کرو ہم بھور سمے کے پنچھی ہوتے
    اڑتے اڑتے ایک دوجے کو چھوتے اور پھر
    کھلے گگن کی گہری اور بے صرفہ آنکھوں میں کھو جاتے
    ابر بہار کے جھونکے ہوتے
    موسم کے ایک بے نقشہ سے خواب میں ملتے
    ملتے اور جدا ہو جاتے
    خشک زمینوں کے ہاتھوں پر
    سبز لکیریں کندہ کرتے
    اور ان دیکھے سپنے بوتے
    اپنے اپنے آنسو رو کر چین سے سوتے
    فرض کرو ہم جو کچھ ہیں وہ نہ ہوتے۔۔۔۔۔۔
     
    Last edited by a moderator: Nov 15, 2017
    Tags:
    Ana Zai and Saad Sheikh like this.

  2. Saad Sheikh

    Saad Sheikh Readers.PK Founder Staff Member

    wow @anam eee amazing choice :love:

    thanks for sharing :thumbs up:
     
    anam eee likes this.
  3. anam eee

    anam eee New Reader Staff Member

    :)
     
  4. Ana Zai

    Ana Zai Star Reader Staff Member Novel Reviews Staff

Share This Page

Loading...